pasand ki Shadi answer question here

پسند کی شادی کے بارے میں سوالات

پسند کی شادی کے بارے میں سوالات

سوال نمبر 1: کیا آپ جانتے ہیں شادی کی کیا تعریف ہے؟

جواب نمبر 1: اسلام میں شادی ایک قانونی معاہدہ ہےایک لڑکے اور ایک لڑکی کے درمیان۔ دونوں دلہا اور دلہن کا شادی کے لیے رضامند ہونا ضروری ہے۔

                        مقبول خبر:  سماجی معاشرے میں طلاق کے مسائل کا کیا کوئی حل ہے اور طلاق کے بچوں پر کیا اثرات ہوتے ہیں

 شادی میں ایک رسمی معاہدہ لازمی سمجھا جاتا ہے ایک اسلامی شادی میں جو کہ دلہا اور دلہن کے حقوق کو واضح کرتا ہے۔ ایک شادی کے معاہدہ کے لیے دو گواہوں کی موجودگی ضروری ہے۔ اسلام کے نقطہ نظر سے جوانی زندگی کے مختلف مراحل کا درمیانہ مرحلہ ہے۔ اس لیے اگر نوجوانی کو انسان کے دوسرے جنم سے تشبیہ دی جائے تو شاید غلط نہ ہو گا۔ کیونکہ جس طرح انسان اپنی پیدائش کے وقت ایک نئی دنیا میں آنکھ کھولتا ہے اسی طرح نوجوانی میں بھی اسے ایک پرخلوص دوست کی ضرورت ہوتی ہے۔

کیا شادی میں رکاوٹ کی ایک وجہ کالا جادو اور بد نطر ہے؟

سوال نمبر 2: شادی ایک لڑکے اور لڑکی کے لیے کیوں ضروری ہے؟

جواب نمبر2: انسان کی فطری خواہشات میں جہاں پانی کی تشنگی، غذا کی بھوک ایک فطری تقاضا ہے، وہاں جنسی خواہشات کو بھی فطری تقاضا شمار کیا گیا ہے۔ اس لیے اگر اسے صحیح سمت شادی کی صورت میں نہ دی گئی تو استمناء اور خود لذتی جیسے اقدامات میں جوان مبتلاء ہو جائیں گے، جبکہ اسلام نے اس فعل کو ممنوع اور حرام قرار دیا ہے۔ لیکن ہمیں یہ بھی  دیکھنا ہو گا کہ اس ناپسندیدگی اور قبیح عادت کا سبب کیا ہے۔

اٹھارہ بہترین تجاویز جو کہ شادی کے رشتے کو مظبوط کرتی ہیں

سوال نمبر 3: من پسند شادی میں رکاوٹ دور کرنے کی دعا کیا ہے؟

جواب نمبر 3: من پسند شادی میں اکثر مرتبہ رکاوٹ آجاتی ہے۔ اس رکاوٹ کی کئی ایک وجوہات ہو سکتی ہیں مثلاََ والدین کا راضی نہ ہونا، لڑکے اور لڑکی کے تعلقات میں دوریاں آ جانا، وغیرہ ۔ تو اس قسم کی تمام رکاوٹیں دور کرنے کے لیے آپ ہم سے ایک مخصوص دعا لے سکتے ہیں اس دعا کی برکت سے آپ کی من پسند کی شادی کی تمام رکاوٹیں دور ہو جائیں گی۔

صورت مریم پڑھنے کے فوائد صورت مریم پڑھنے کے زندگی پر اثرات ملاحضہ فرمائیں

سوال نمبر 4: کیا اسلام من پسند شادی کی اجازت دیتا ہے؟

جواب  نمبر 4: شادی کے معاملہ میں شریعت نے مرد و عورت دونوں کو پسند اور ناپسند کا پورا پورا اختیار دیا ہے اور والدین کو بچوں پر جبر و سختی سے اپنی مرضی مسلط کرنے سے منع کیا ہے۔ تاہم دوسری طرف بچوں کو بھی ترغیب دی ہے کہ وہ اپنے والدین کا اعتماد حاصل کرتے ہوئے ہی اپنے جیون ساتھی کا چناؤ کریں۔پسند کی شادی اسلام میں ممنوع نہیں ہے لیکن پسند کی شادی کے لئےآج کل کی نوجوان نسل نے جو رواج اپنا رکھا ہے،وہ خاندانوں کو جوڑنے کی بجائے لڑائی و فساد پر آمادہ کرتا ہے۔کیونکہ آج کل کی نوجوان نسل کے افراد شرم و حیا چھوڑ کرگھر والوں کی عزت تار تار کرکے اور غیر اسلامی اطوار اپناکراور بے حیائی کا لبادہ اوڑھ کر پسند کی شادی پر بضد ہوتے ہیں۔

 

اپنا تبصرہ بھیجیں