nazar e bad, nazar bad ka rohani ilaj

کیا نظر بد کی علامات اور اس کی پہچان ممکن ہے؟

کیا نظر بد کی علامات اور اس کی پہچان ممکن ہے؟

نظر بد ہمارے معاشرے کے اندر ایک بہت ہی جانا پہچانا موضوع ہے۔  اس موضوع پر بہت کچھ لکھا جا چکا ہے ۔جی ہاں نظر بد واقعی ایک حقیقت ہے اور اس کا لگنا احادیث مبارکہ سے بھی ثابت ہے۔ نظر بد کے بارے میں فرمان نبویؐ ہے کہ نظر  بدآدمی کو قبراور    اونٹ کو ہنڈیا تک لے جاتی ہے (المفہوم)۔آج کے جدید اور ترقی یافتہ دور میں عام آدمی ان باتوں کو آسانی سے ماننے کو تیار نہیں ہوتا۔ حالانکہ نظر بد ایک حقیقت ہے۔  آیئے اب ہم نظر بد کی علامات کا جائزہ لیتے ہیں۔

                        سماجی معاشرے میں طلاق کے مسائل کا کیا کوئی حل ہے اور طلاق کے بچوں پر کیا اثرات ہوتے ہیں

جب کسی پر نظر بد کو معلوم کرنا ہو تو اس کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ جس شخص پر ایسا کوئی شک ہو تو اس شخص پر قرآن کریم کی تلاوت کی جائے ۔ ان آیات کی تلاوت جو صحیح عقیدے اور عمل والے علماء کے تجربات کے مطابق اور بلا شک و شبہ اللہ تعالیٰ کی مشیت سے ایسے معاملات میں علاج کی تاثیر رکھنے والی ہوتی ہیں۔

کیا شادی میں رکاوٹ کی ایک وجہ کالا جادو اور بد نطر ہے؟

جب ان آیات کو مشکوک شخص یا مریض شخص کے سامنے تلاوت کیا جا تا ہے تو اس پر درج ذیل علامات ظاہر ہوتی ہیں۔

1۔چہرے پر پیلاہٹ ظاہر ہونا

2-سینے میں گھٹن کا احساس ہونا۔

3-تلاوت سننے کے دوران جسم کے مختلف حصوں میں درد ہونا۔

4-معمول سے زیادہ گرمی محسوس ہونا۔

5-پسینہ آنا خاص طور پر کمر پر پسینے کی کمی یا زیادتی سے نظر کی شدت کا اندازہ ہو جاتا ہے۔

6- پہلوؤں میں درد محسوس ہونا۔

7-بے چینی کی کیفیت ہو جانا اور ادھر ادھر دیکھتے اور متوجہ ہوتے رہنا۔

8-کسی سبب کےبغیررونا یا رونے کی کیفیت کے بغیر آنسو جاری ہوجانا۔

استخارہ کیوں ضروری ہے مکمل تفصیل اس آرٹیکل میں دیکھے

                        پسند کی شادی کے لیے اللہ کے نام اور قرآن پاک کی آیتوں کی مدد لیں

9-کسی وقت یہ حالت پاس بیٹھے ہوئے لوگوں پر بھی ظاہر ہوجاتی ہے، جو کہ علاج کی ٖغرض سے نہیں بیٹھے ہوتے۔ایسی صورت میں معالج کو ان کی طرف بھی توجہ کرنا پڑتی ہے لیکن دیکھنے والوں پر عموماََ یہ اثر مریض کی حالت دیکھنے یا آیات شریفہ کو سمجھنے کی وجہ سے ظاہر ہوتاہے۔ اس سے یہ نہیں سمجھا جانا چاہیے کہ وہ لوگ بھی کسی نظر بد کا شکار ہیں۔

10-پہلوؤں کا پھڑکنا اور جسم کے مختلف حصوں کا بلا ارادہ خودبخود حرکت کرنا۔

11-دل ڈوبنے کی کیفیت وارد ہونا۔

12-پٹھوں کا اکڑنا ، کھینچنا اور درد ہونا۔

13-نیند،نیم بے ہوشی اور بے حواسی محسوس ہونا اور کوئی بھی کام کرنے کی قدرت نہ پانا۔

14-پہلوؤں میں ٹھنڈک کا احساس ہونا۔

نظر بد کی تین بڑی علامات:

1-ہروقت بیمار رہنا      2-کمزور ہوجانا     3-کھانا پینا چھوڑدینا

زمانہ قدیم سے اب تک سحر وجادو کی جتنی بھی خبیث سے خبیث تر اقسام ایجاد ہوئی ہیں ان کی بنیادحسد اور آغاز نظر بد سے ہوتا ہے۔اس سے بچنے کے لیے انسان کو اپنا روحانی مقام بلند تر کرنا چاہیے۔ قرآن مجید کے علم کی روشنی اور اس کے روحانی فیوض و برکات سے تمام قسم کے معاملات بہتر ہو جاتے ہیں اور فیض کا دائرہ بھی وسیع ہو جاتا ہےاور روحانی قوتیں خود ہی مددگار بن کرفیض رساں بن جاتی ہیں۔

اٹھارہ بہترین تجاویز جو کہ شادی کے رشتے کو مظبوط کرتی ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں